Select Language :

بیٹھنے والے کی نیندکے ناقض وضوہونے کی صورتیں:

سوال:    بیٹھ کرسونے کی کونسی صورتیں ناقض وضو نہیں ان کی تفصیل مطلوب ہے؟بینواتوجروا۔

الجواب باسم ملھم الصواب

قال فی الدر:(نوم یزیل مسکتہ)أی قوتہ الماسکۃبحیث تزول مقعدتہ من الأرض وھوالنوم علی أحدجنبیہ أوورکیہ أوقفاہ أووجھہ و(الا)یزل مسکتہ(لا)ینقض وان تعمدہ فی الصلوٰۃأوغیرھاعلی المختارکالنوم قاعداًولو مستنداًالی مالوأزیل لسقط علی المذھب وساجداًعلی الھیئۃالمسنونۃ ولوفی غیرالصلوٰۃعلی المعتمد وذکرہ الحلبی أومتورکاًأومحتبیاًورأسہ علی رکبتیہ أوشبہ المنکب(إلی قولہ)ولونام قاعداًیتمایل فسقط ان انتبہ حین سقط فلانقض بہ یفتی وقال ابن عابدینؒ(قولہ علی المذھب)أی علی ظاھرالمذھب عن أبی حنیفۃؒوبہ أخذعامۃالمشایخ وھوالأصح کمافی البدائع واختارالطحاویؒ والقدوریؒ وصاحبؒالھدایۃ:النقض ومشی علیہ بعض أصحاب المتون وھذا اذا لم تکن مقعدتہ زائلۃًعن الأرض وإلانقض اتفاقاًکمافی البحروغیرہ۔۔۔۔ (قولہ أوشبہ المنکب)أی علی وجھہ وھوکمافی شروح الہدایۃ:أن ینام واضعاًالیتیہ علی عقبیہ وبطنہ علی فخذیہ ونقل عدم النقض بہ فی الفتح عن الذخیرۃأیضاًثم نقل عن غیرھا:لونام متربعاًورأسہ علی فخذیہ نقض وقال: ھذایخالف مافی الذخیرۃواختارفی شرح المنیۃ:النقض فی مسئلۃالذخیرۃلارتفاع المقعدۃوزوال التمکن وإذانقض فی التربع مع أنہ أشد تمکناًفالوجہ الصحیح النقض ھناثم أیدہ بمافی الکفایۃعن المبسوطین من أنہ لونام قاعداًووضع  الیتیہ علی عقبیہ وصارشبہ المنکب علی وجھہ قال أبویوسفؒ:علیہ الوضوء۔(ردالمحتار:۱؍۱۳۲(

تفصیل بالاسے امورذیل ثابت ہوئے:

۱              اگرکسی چیزکے ساتھ ٹیک لگائے بغیرسویااورگرانہیں یاگرتے ہی فوراًبیدارہوگیاتووضونہیں ٹوٹا۔

۲            سجدہ کی ہیئت مسنونہ پرسوناناقض وضو نہیں اگرچہ غیرنمازمیںہو۔

۳            اگرپوری مقعدزمین پرقائم نہیں اورٹیک لگاکرسویا،خواہ اپنی ران وغیرہ ہی پرہوتووضوٹوٹ گیا،لہذادو زانوبیٹھ کرران وغیرہ پرٹیک لگاکرسونے سے وضوجاتارہے گا۔اسی طرح چارزانوبیٹھ کرران پرٹیک لگائی اوراتناجھک گیاکہ پوری مقعدزمین پرقائم نہیں توبھی وضوجاتارہاالبتہ اگرپوری مقعدزمین پرقائم رہے مثلاگھٹنے کھڑے کرکے ہاتھوںسے پکڑلیے یاکپڑے وغیرہ سے کمرکے ساتھ باندھ لیے اورگھٹنوں پرسررکھ کرسوگیایاچارزانوبیٹھ کرکہنیوں سے رانوںپرٹیک لگاکرصرف اتناجھکاکہ پوری مقعدزمین پرقائم رہی تووضونہیں ٹوٹا۔

۴             اگرپوری مقعدزمین پرقائم ہے اورٹیک لگاکراتنی گہری نیندسویاکہ اس چیزکوہٹادیاجائے توگرجائے تواس صورت میں اختلاف ہے عدم نقض مفتی بہ۔فقط واللہ تعالیٰ اعلم

۲۰؍ذی الحجہ ۹۶ھ؁(احسن الفتاویٰ:۲؍۲۲۔۲۳ (

کتب ورسائل

قرآن
حدیث
اسلامیات
سیرت رسولؐ
عقیدہ
فقہ
تصوف
تقریر

سوال/جواب

تمباکو کھانے کے بعد وضو:
شراب پینے کے بعدنشہ آجائے تووضوٹوٹ جاتاہے:
تمباکونوشی اورنسوارکشی سے وضوٹوٹتاہے یانہیں:
شراب پینے کے بعدنشہ آجائے تووضوٹوٹ جاتاہے:
وضوء کے فرائض وسنن
وضو میں واجبات
چہرہ کی حد کہاں سے کہاں تک ہے اور داڑھی کے غسل کاحکم
گنجے سروالے آدمی کے چہرے کی حدود کاحکم
پیشانی کے اوپرکے حصہ میں بال نہ ہوں تووضومیں چہرہ کہاں تک دھوناچاہیے
عورت کے ناک،کان میں سوراخ ہوتووضومیں پانی پہنچاناضروری ہے یانہیں

         آگے پڑھئے